Ganday jokes in urdu

Ganday jokes in urdu

ڈاٹسن کا زمانہ ھے جس میں 12 مسافر بیٹھنے کی گنجائش ہوتی ھے

سامنے کی سیٹ پر 6 مرد حضرات بیٹھے ہیں

جبکہ دوسری طرف 5 عورتیں بیٹھی ہوئی تھی

 ایک مسافر لیڈی  کی کمی تھی

جو کہ تھوڑی دیر بعد آکر بیٹھ گئی

اس عورت کے ساتھ 5 بچے بھی تھے

بیٹھنے کی جگہ تو تھی نہیں اسلئے خالی جگہ پر کھڑے ھو گئے

ایک لڑکی کو ناگوار گزرا تو بولی خالہ ایک تو آپ کے پاس سکے بہت ہیں

یہ سن کر عورت بہت شرمندہ ہوئی

سب لوگ چپکے چپکے دل ہی دل میں ہنس رہے تھے

 لڑکی نے اسے سب کے سامنے شرمندہ کر دیا

تو وہ عورت بولی

 فکر نہ کر لڑکی تیرا بھی نوٹ ٹوٹ جائے گا

 لڑکی مارے شرم کے پانی پانی ھو گئی

عورت کا یہ کہنا تھا کہ سب مسافروں کو جیسے سانپ سونگھ گیا اور وہ لڑکی شرمندہ ھو کر ڈاٹسن سے اتری اور ایسے غائب ہوئی جیسے بجلی

Leave a Reply